showcase demo picture

(نیٹرم میور کا کیس) Part-1


(نیٹرم میور کا کیس)
Part-1
ڈاکٹر بنار س خان اعوان ، واہ کینٹ
یہ مارچ 2000 ؁ء کا وا قعہ ہے۔
ایک لڑکا نام عامر خان ، عمر 24 سال، غیر شادی شدہ، صبح سویرے میرے کلینک میں داخل ہوا اور سلام کر کے بیٹھ گیا۔ اور جب تک میں نے اس سے حال نہیں پوچھا وہ خاموش بیٹھا رہا۔
میرے پوچھنے پر جو علامات اس نے بتائیں ان کے مطابق:
۱۔ رات کو نیند نہیں آتی۔ گذشتہ 6 سال سے مسکن ادویات لے رہا ہوں۔
۲۔ بھوک محسوس نہیں ہوتی۔ کھانا گلے میں اٹک جاتا ہے۔
۳۔ معدہ میں خالی پن کا احساس رہتا ہے۔
۴۔ کھانے کا ذائقہ محسوس نہیں ہوتا۔
۵۔ پیٹ میں گیس بہت بنتی ہے۔
۶۔ قبض رہتی ہے(اسپغول کا چھلکا اکثر استعمال کرتا ہوں)۔
۷۔ دماغ ماؤف رہتا ہے۔ قوت برداشت بالکل نہیں ہے۔
۸۔ یاداشت کمزور ہے۔
۹۔ غصہ بچپن میں بہت آتا تھا۔ اب خاص نہیں آتا۔
۱۰۔ خواب گندے اور ناخوشگوار آتے ہیں۔ ایک خواب جو مجھے بہت تنگ کرتا ہے کہ میں شدید پیاس کے عالم میں پانی کی تلاش کرتا رہتا ہوں اور سو کر اٹھنے کے بعد بھی یہ خواب میرے ذہن سے محو نہیں ہوتا۔پیاس کے بارے میں اس نے بتایا کہ اس کی پیاس نارمل ہے۔
لڑکا بولتا رہا میں سنتا رہا۔ اور دوران گفتگو میں ہاں ، ہوں اچھا، اور کچھ، مزید کوئی بات، کوئی اور شکایت، جیسے الفاظ استعمال کرتا رہا اور لکھتا رہا۔
جب اس نے اپنی یادداشت کی ساری ٹوکری میرے اوپر انڈیل دی تو میرے سوالات کا سلسلہ شروع ہوا۔ یہ لڑکا مجھے شدید ڈپریشن، احساس ندامت، ضمیر کی خلش اور ذہنی کشمکش کا شکار لگا۔
میرے ساتھ چائے کا ایک کپ پینے کے بعد فضا مزید دوستانہ ہو گئی۔ تو وہ مجھے اپنے ماضی کی دنیا کی سیر کرانے چل پڑا۔ اس نے بتایا ۔میں اپنی کزن سے محبت کرتا تھا اور ہم دونوں شادی کے بھی خواہش مند تھے لیکن لڑکی کے والدین راضی نہ ہوئے۔
میں ان دنوں B.A. کی تیاری میں مصروف تھا۔ جب ہم دونوں نے گھر سے بھاگ کر کورٹ میرج کا فیصلہ کر لیا۔وقت مقررہ پر جب میں اسے لینے اس کے گھر پہنچا تولڑکی نے جانے سے صاف انکار کر دیا۔ اور الٹا اپنے والدین سے کہا کہ یہ مجھے زبردستی لے جانا چاہتا ہے، میں نے اسے آنے کے لئے ٹیلیفون نہیں کیا۔
ڈاکٹر صاحب: وہ پانچ منٹ مجھے زندگی بھر نہیں بھولیں گے۔مجھ پر بے سرو پا الزامات لگائے گئے۔ حالانکہ میں اس سے پاکیزہ محبت کرتا تھا۔ میں نے زندگی میں کبھی کسی کو دھوکہ نہیں دیا۔ کبھی کسی کے اعتماد کو ٹھیس نہیں پہنچائی ۔ کبھی کسی کی طرف میلی آنکھ سے نہیں دیکھا۔
تعلیم کے حوالے سے اس نے بتایا۔
میں ہمیشہ ٹاپ پوزیشن لیتا رہا ہوں۔ لیکن اس واقعہ کے بعد تعلیم سے جی اچاٹ ہو گیا۔اور میں تعلیم جاری نہ رکھ سکا۔ میں اب بزنس کرنا چاہتا ہوں۔ میں پانچ وقت نماز کی پابندی کرتا ہوں اور ہر ماہ قران مجید ختم کرتا ہوں۔
مجھے جب بھی وہ واقعہ یاد آتا ہے۔ تو گلا شدید درد کرنے لگتا ہے اور کنپٹیاں درد کرتی ہیں۔ سانس لینے میں تنگی محسوس کرتا ہوں۔
اس دوران دوبار ( نیند کی گولیاں کھا کر) خود کشی کی کوشش کر چکا ہوں۔ زندہ رہنے کو جی نہیں کرتا۔اس واقعہ کے بعد اب تک رویا نہیں۔ رونا آتا ہی نہیں۔
صبح سے شام تک دکان پر ہوتا ہوں۔ کسی سے میل ملاپ نہیں رکھتا ۔ نہ کوئی غم نہ خوشی۔ ایک چلتی پھرتی مشین کی مانند ہوں۔ ایک چھوٹی بہن ( جو شادی شدہ ہے) جب گھر میں آتی ہے تو اس سے مل کر خوش رہتا ہوں۔ سوائے ایک بہن کے اور کوئی دوست نہیں۔ کسی سے اپنے احساسات شیئر نہیں کرتا۔
میں سمجھتا ہوں کہ دنیا میں ہر شخص دوسرے کو دھوکا دے رہا ہے۔ محبت پر سے میرا یقین اٹھ گیا ہے۔جی کرتا ہے سب کچھ چھوڑ چھاڑ کر کہیں چلا جاؤں۔ سفر کرنے اور گھومنے پھرنے کو جی کرتا ہے۔
وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ لڑکی سے انتقام لینے اور اسے ذلیل و رسوا کرنے کی خواہش بڑہتی جا رہی ہے۔ جی کرتا ہے اس کے سارے محبت بھرے خطوط اس کے بھائی کو روانہ کر دوں۔ اسے سارے عزیز رشتہ داروں میں بے عزت کردوں۔میں اسے زندگی بھر معاف نہیں کر و ں گا۔
کھانے پینے کے حوالے سے اس نے بتایا کہ اسے میٹھا نمکین دونوں پسند ہیں۔منہ خشک رہتا ہے۔ پیاس نارمل ہے۔ ٹھنڈی یخ چیزیں پسند ہیں۔ سردی بہت لگتی ہے۔ گوشت اچھا نہیں لگتا ۔ آندھی طوفان کا خوف رہتا ہے۔بچپن میں نکسیر بہت آتی رہی ہے۔ہاتھ پاؤں اور پشت میں جلن کا احساس رہتا ہے۔
ماضی کے حوالے سے لڑکے نے بتایا۔
گھر میں لڑائی ہونے پر بھائی کو دو بار شوٹ کرنے کی کوشش کی۔سب سے پہلے جب میں ساتویں جماعت میں تھا تو ایک لڑکے سے جھگڑا ہونے پر اس پر فائرنگ کی تھی۔

قارئین کرام!اس لڑکے کے ساتھ تقریباً دو گھنٹے تک میری نشست رہی۔ میں نے اسے اگلے روز آنے کو کہا۔ اور اس دوران اس کا کیس سٹڈی کرنے اور علامات کی درجہ بندی کرنے میں مشغول رہا۔
25 علامات ریپرٹرائز کی گئیں۔
راڈار سافٹ ویر کے مطابق فاسفورس نمبر 1 اور نیڑم میور نمبر2 پر آئیں۔
اس کیس میں مجموعہ علامات اگر چہ فاسفورس کی طرف اشارہ کرتا ہے۔ تاہم دوا کا ESSENCE یعنی مرکزی خیال نیٹرم میور کے حق میں نظر آتا ہے۔مثلاً الگ تھلگ ہو جانے کا رویہ، کسی سے دکھ درد کا نہ بانٹنا، آنسو روکے رکھنا، معاف نہ کرنے کا رجحان، ناکامی، اداسی،ماضی کو گلے سے لگائے رکھنا، غم و غصہ کے جذبات یہ سب نیٹرم میور کی طرف اشارہ کرتے ہیں۔
جبکہ آندھی طوفان کا خوف، معدہ میں خالی پن کا احساس، جسم کے مختلف اعضاء میں جلن، بچپن میں نکسیر آنے کے ہسٹری فاسفورس کی طرف اشارہ کرتے ہیں۔
لیکن علامات میں ایک خاص کلیدی علامت خواب میں پیاسا ہونا اور پانی کی تلاش خصوصاً نیٹرم میور کو طلب کرتی ہے۔میں نے دوسرے روز لڑکے کو نیٹرم میور CM کی ایک خوراک دے کر پندرہ روز بعد آنے کو کہا۔
جاری ہے ۔ ۔ ۔ ۔

Posted in: Uncategorized, Urdu
Return to Previous Page

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Theme Features

Welcome to the Zen Theme which is best used for personal blogging. Here is a list of some of the special features you will be able to take advantage of when customizing your website and blog:
  • Theme Control panel
  • Customize colours, layout, buttons, and more
  • Dynamic widgets with varied widths
  • Up to 8 Widget Positions
  • Built-in Social Networking
  • Google Fonts for Headings and site title
  • and a lot more...

Relax With Herbal Teas

When enjoying your moment of zen, it's best to enjoy fresh herbal teas for relaxation. Of course, choosing the right zen teas requires the expertise of asian herbalists.

Recent Posts

Check out the recent articles posted here at Zen and keep up to date with the latest news and information about having a zen lifestyle.