showcase demo picture

میرے مہمان

میرے مہمان
پارٹ۔42
بورلینڈ نے لکھا ہے کسی ایسے مریض پراگر تھوجا علامات کے باوجود کام نہیں کرتی تو میڈورینم دیں۔
تھوجا ٹھنڈی جب کہ یہ گرم دوا ہے۔
تھوجا introvertجب کے یہ extrovert ہوتا ہے۔
تھوجا بائیں جانب جب کہ یہ دائیں جانب کی دوا ہے۔
تھوجا مصلحت آمیز جب کہ میڈورینم بے باک ہے۔
تھوجا بالعموم دبلے پتلے ہوتے ہیں، میڈورینم میں ایسا بہت کم ہوتا ہے۔
تھوجا کی نسبت میڈورینم میں جنسی خواہش کی زیادتی ہوتی ہے۔
تھوجا کے تین شناختی نشانات۔
ضمیر کی خلش، خودغرضی ا ور چڑچڑاپن
میڈورینم کے تین شناختی نشانات۔
ضمیر کی خلش،احساس عدم تحفظ اور خوف
اگر مریض میں تھوجا ظاہر ہو اور کام نہ کرے تو میڈورینم کے بارے میں سوچیں۔ بسااوقات مریض میں ادل بدل کر ظاہر ہوتی ہیں۔
انجائنا میں میڈورینم ٹاپ کی دوا ہے۔(آرنیکا، اورم میٹ، لیکسس)۔ ایسی فیملی جس میں لوگ نسبتاً اوئل عمری میں Heart attack سے مرتے ہیں وہاں پر اس دوا کا استعمال لازم ہو جاتا ہے۔
اس دوا کو کینسر کے ہر کیس میں کسی موڑ پر مزاجی دوا کے ساتھ بطور Intercurrent استعمال کرانا چاہیے۔حوالہA.H. Grimer۔
جیسا کہ پہلے بتایا گیا ہے۔یہ دوا مزاج کے اعتبار سے 180 ڈگری کا رخ بدلتی ہے۔ ایک شخص ایک لمحے میں Introvert ہو گا تو دوسرے لمحے Extrovert ہو سکتا ہے۔ ایک لمحے میں رحمدل دوسرے میں سنگدل۔
بعض مریضوں کو یہ وہم ہوتا ہے کہ اللہ تعالیٰ ان سے Direct بات کرتا ہے۔ یہ لوگ نکس وامیکا، ٹیوبر، سلفر اور فاسفورس کی طرح مہم جو طبیعت کے مالک ہوتے ہیں۔ جہان نو کی تلاش میں رہتے ہیں۔ جب کہ ان کے برعکس کلکیریاکارب،گریفائٹس،پلسٹیلا مہم جوئی سے گھبراتے ہیں۔میڈورینم کی راتیں جاگتی ہیں۔
ایک بار ایک بچے نے اپنے کلاس فیلو سے شکایت کی کہ میرے ماما اور پاپا کو چاہیے کہ وہ اپنے آپ کو کسی سائکارٹیسٹ کو دکھائیں۔ کیونکہ رات جب میں جاگ رہا ہوتا ہوں تو مجھے کہتے ہیں سو جاؤ اور صبح جب میں سو رہا ہوتا ہوں تو کہتے ہیں جاگ جاؤ۔ میڈورینم ایسے ہی ہوتے ہیں۔ فاسفورس اور ارجنٹم نائیٹریکم کی طرح بے ساختہ اور منہ پھٹ قسم کے لوگ۔
اب ہم ایک ایسی شخصیت کو لیتے ہیں جو کبھی کھل کر صاف صاف اور سیدھی سادھی بات نہیں کرتی۔ اس سے بات اگلوانے کے لئے بڑی محنت کرنا پڑتی ہے۔ان کا انداز” صاف چھپتے بھی نہیں سامنے آتے بھی نہیں ” والا ہے۔ یہ شخص جب آپ کے کلینک میں آئیگا تو آپ دیکھیں گے کہ یہ آپ کو انٹرویو دے گاکم اور آپ سے لے گا زیادہ۔یہ ایک طرح سے آپ کا امتحان لے رہا ہوتا ہے۔
مثلاً مریض یوں کہہ سکتا ہے۔ ڈاکٹر صاحب میرا بازو سن ہو جاتا ہے۔ کیا خیال ہے کہیں ریڑھ کی ہڈی کا تو کوئی مسئلہ نہیں۔ آپ بازو ہلا جلا کر دیکھتے ہیں اور جسم کی باقی شکایات کے بارے میں پوچھتے ہیں تو سب اچھا کی رپورٹ ملتی ہے۔ آپ کہتے ہیں پریشان ہونے کی ضرورت نہیں کوئی خاص بات نہیں۔(مریض)لیکن میں نے آرتھوپیڈک سرجن کو دکھایا تھا اس کا کہنا ہے کہ آپ کی گردن کے مہرے خراب ہیں۔یہ دیکھئے ایکسرے رپورٹ۔ حا لا نکہ یہ بات وہ شروع میں بھی آپ کو بتا سکتا تھا۔اس کی جگہ نکس وامیکا ہوتا تو وہ سیدھا اور صاف صاف بڑے chronologicalآرڈر میں بیان کرتا اور آپ کو ٹوکنے کی بہت کم ضرورت پڑتی۔

Posted in: Urdu
Return to Previous Page

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Theme Features

Welcome to the Zen Theme which is best used for personal blogging. Here is a list of some of the special features you will be able to take advantage of when customizing your website and blog:
  • Theme Control panel
  • Customize colours, layout, buttons, and more
  • Dynamic widgets with varied widths
  • Up to 8 Widget Positions
  • Built-in Social Networking
  • Google Fonts for Headings and site title
  • and a lot more...

Relax With Herbal Teas

When enjoying your moment of zen, it's best to enjoy fresh herbal teas for relaxation. Of course, choosing the right zen teas requires the expertise of asian herbalists.

Recent Posts

Check out the recent articles posted here at Zen and keep up to date with the latest news and information about having a zen lifestyle.