showcase demo picture

میرے مہمان

میرے مہمان
پارٹ۔ 45
تھوجا کا سلوگن ہے۔ جس دا کھائیے اسی دے گن گائیے۔
تھوجا کو دیکھنا ہو تو جو ساتھی ریسلنگ دیکھتے ہیں وہ پال ہیمن کو دیکھ لیں۔
نیٹرم میور، سٹیفی، تھوجا،کارسی نوسن، پلسٹیلا،فاسفورس، ارجنٹم نائیٹریکم، میگنیشیا میور ایسے لوگ ہیں جو دوسروں کو خوش رکھنا چاہتے ہیں۔ کسی محفل یا تقریب میں شرکت کرنی ہو تو جیسا کہ خواتین اپنے میک اپ کا بہت خیال کرتی ہیں مرد بھی کرتے ہیں۔بہر حال خواتین کی کوشش ہوتی ہے کہ وہ خوبصورتی،میک اپ اور خوش لباسی میں سب سے نمایاں نظر آئیں۔ لیکن تھوجا میں یہ صفت نہیں ہے۔ یہ کبھی ایسا لباس نہیں پہنے گی جو اسے دوسروں سے نمایاں کرتا ہو۔یہ لوگ فرنٹ لائن پر آنے سے گریز کرتے ہیں۔ تھوجا کو اگر پتا چل جائے کہ آج فنکشن میں زیادہ لوگ پینٹ شرٹ پہن کر آئیں گے تو یہ بھی ایسا ہی کرے گا۔اور اگر شلوار قمیض والے لوگ ہیں تو یہ بھی شلوار قمیض پہن کر ہی آئے گا۔
ایک خاوند کو تھوجا بیوی کی ذاتی پسند نا پسند کی کبھی سمجھ نہیں لگ سکتی۔ مارکیٹ میں کپڑے خریدنا ہیں تو ایسی بیوی کی کوشش ہو گی کہ وہ ایسا کپڑا خریدے جو اس کے خاوند کو پسند ہیں۔ اگر خاوند نے پسند کر لیا تو کہے گی ہاں مجھے بھی یہی ڈیزائن اچھا لگ رہا تھا۔ یہ خاتون اپنے خاوند کو خوش رکھنے کے لئے جھوٹ بھی بول سکتی ہے۔ ان لوگوں کی مثال سٹیج پر کام کرنے والے اس مسخرے کے طرح ہے جو روزانہ ہزاروں لوگوں کو ہنساتا ہے لیکن خود اداسی و محرومی کا شکار رہتا ہے۔ یہ لوگ اپنی شناخت سے عاری ہو جاتے ہیں۔ ایک انجانا سا احساس جرم انہیں کچوکے لگا تارہتا ہے۔
اندرا گاندھی نے ایک بار کہا تھا۔ ”انسان ہمیشہ تنہا ہی رہتا ہے۔ کبھی بچے کے روپ میں،کبھی بہن بھائی کے روپ میں،کبھی بیوی کبھی ماں باپ کے روپ میں لیکن رہتا وہ تنہا ہی ہے“۔ یہ تھوجا کی سوچ ہے۔آپ تھوجا کو قائل نہیں کر سکتے کہ دنیا میں سچا پیار، بے لوث ہمدردی اور خلوص نام کی کوئی شے پائی جاتی ہے۔کبھی کبھی تھوجا جب اپنے اندر جھانکنے کی کوشش کرتا ہے تو حیران ہو کر سوچتا ہے اور اپنے آپ سے سوال کرتا ہے کہ آخر میں کون ہوں۔ کیونکہ جس طرح مجھے دنیا جانتی ہے ویسا تو حقیقت میں میں نہیں ہوں۔ اور جو حقیقت میں ہوں اس کی مجھے خود سمجھ نہیں آ رہی۔
CONFUSION OF IDENTITY
Thuja says, “I am stranger in my own life”.
دوران انٹر ویواگر آپ مریض سے سوال کریں کہ کیا آپ کی شناخت آپ کی Identity کیا ہے۔ اگر تھوجا کے علاوہ کوئی اور شخص ہو گا تو سوال سن کر حیران ہوجائے گا۔وہ پوچھے گا ڈاکٹر آپ کا اس سوال سے کیا مطلب ہے میں سمجھا نہیں۔
لیکن اگر تھوجا ہو تو وہ یقیناجان جائے گا کہ آپ پوچھنا کیا چاہتے ہیں۔ اور وہ جواب میں کہے گا۔”میں نے بار بار اس بات پر غور کیا ہے لیکن مجھے خود خبر نہیں“۔ایلومینا میں بھی یہ احساس پایا جاتا ہے تھوجا کو یہ احساس ہوتا ہے کہ وہ محبت کے قابل نہیں۔
تھوجا بہت گہری دوا ہے۔ بعض اوقات مزمن کیسز میں آپ دیکھتے ہیں کہ مریض شفایاب نہیں ہو رہا، بہت دوائیں دی جا چکی ہیں مریض بھی بڑا Co-operative ہے۔پابندی سے آرہا ہے اور آپ سوچتے ہیں کہ مریض بہت گہرا اور کائیاں ہے۔ تو آپکو یقیناً تھوجا کے بارے سوچنا چاہیے دوسروں سے کچھ چھپانے،دوسروں سے اپنا مطلب نکالنے اور اس کیلئے Dirty tactis استعمال کرنے،اپنے آپ کو غیر محفوظ سمجھنے، ہر کسی سے بنا کر رکھنے میں یہ آرسنک کے ساتھ مشابہ ہے۔ یہی وجہ ہے کہ یہ آرسنک کا مزمن بھی ہے۔لیکن آرسنک کے ساتھ پرابلم یہ ہے کہ وہ اپنے آپ کو اچھی طرح Hideنہیں کر سکتا۔(Master J.F)۔ تاہم آرسنک اس کی بہت قریبی دوا ہے۔دونوں میں تقریباً ڈھائی ہزار علامات مشترک ہیں۔

Posted in: Urdu
Return to Previous Page

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Theme Features

Welcome to the Zen Theme which is best used for personal blogging. Here is a list of some of the special features you will be able to take advantage of when customizing your website and blog:
  • Theme Control panel
  • Customize colours, layout, buttons, and more
  • Dynamic widgets with varied widths
  • Up to 8 Widget Positions
  • Built-in Social Networking
  • Google Fonts for Headings and site title
  • and a lot more...

Relax With Herbal Teas

When enjoying your moment of zen, it's best to enjoy fresh herbal teas for relaxation. Of course, choosing the right zen teas requires the expertise of asian herbalists.

Recent Posts

Check out the recent articles posted here at Zen and keep up to date with the latest news and information about having a zen lifestyle.