showcase demo picture

کتاب(ایک سرجن کا سفر)سے انتخاب(مرزا انور بیگ) (پارٹ ۔33)


متحرم قارئین،ہم آپ کی خدمت میں مشہور ہومیوپیتھک ڈاکٹرمرزا انور بیگ کی کتا ب سے اقتباسات پیش کرتے رہیں گے۔
امید ہے کہ آپ کو پسند آئے گا۔
کتاب(ایک سرجن کا سفر)سے انتخاب(مرزا انور بیگ)
(پارٹ ۔33)

میں سوچ رہا تھا کہ کہیں ملیریا کے لئے جو ایلوپیتھک دوائیں دی گئی تھی ان کا ہارٹ پر ایسا اثر ہو سکتا ہے؟بہر کیف اب معاملہ مشکل تھا۔نرسنگ ہوم میں ایسے مریض کا علاج ممکن نہ تھا نہ ہی گھر میں۔غرض یہ کہ انہیں ایک ٹیچنگ اسپتال کے ای ایم میں داخل کیا گیا تھا جہاں ہر طرح کے ان کے ٹیسٹ ہوئے لیکن وجہ کیا وہ سمجھ نہ آ سکی۔بعد ازآں میں نے انہیں گھر لے آ نے کا فیصلہ کیا کیونکہ اسپتال میں ایک لمبے عرصے تک جانچوں کے دوران ان کی ذہنی کیفیت طرح طرح کے وسوسوں اور اندیشوں میں مبتلا ہو چکی تھی۔یعنی نیوروسس کی طرف جا رہے تھے۔تب گھر لے آیا باندرہ میں اس بنگلے میں ان کی رہائش کا انتظام کیا۔وہاں اس بنگلے میں جگہ کافی بڑی تھی میں نے ہومیوپیتھی کے کئی سیمینار وغیرہ بھی وہیں کئے تھے۔ اب اسے اسپتال کی شکل دے دہ اور والد صاحب کی دیکھ ریکھ میں کوئی کمی نہ آنے دی نتیجہ یہ ہوا کہ وہ روبصحت ہونے لگے۔اس بیچ بیٹی نے بی ایچ ایم ایس کاامتحان پاس کر لیا اس کی انٹرن شپ وغیرہ بھی کمپلیٹ ہو چکی تھی۔رشتے کی بات بھی چل رہی تھی یمارے دیرینہ دوست جناب رئیس ظہیر کے فرزند انجمن میاں اسفر ظہیر سے اور جو میں قبول کر چکا تھا۔شادی کی تاریخوں کی بابت جب والد صاحب ے پو چھا تو وہ بضد ہوئے کہ جس قدر جلد ہو اس قدر۔ان کا جملہ تھا”میں تب تک کہاں جیوؤں گا”۔اس لئے جو کچھ ہوا وہ سب جلدی میں۔منگنی نکاح اور پھر ریسیپشن۔اپنی پوتی کی شادی کے بعد والد صاحب قریب ایک ڈیڑھ ماہ تک اور جیئے۔جولائی ۱۹۹۶میں انتقال کر گئے اور اپنے مالک حقیقی سے جا ملے۔
کیا ہومیوپیتھی فیل ہوئی ہے یا کہ ہومیوپیتھ۔کیا والد صاحب کو کوئی بیماری تھی یا کہ واقعی وہ اس سیپیا کی پرووِنگ تھی۔ہومیوپیتھی کی دوائیں اسی طرح سے پروف کی گئی ہیں صحت مند انسانوں میں۔مگر ان دنوں مجھے یہ سب کی سمجھ نہیں تھی کہ اس پہلو سے بھی سوچتا۔حالانکہ آج سوچتا ہوں کہ وہ پرووِنگ ہی تھی اور الگ الگ مواقع پر ان کی الگ الگ دوا تھی۔اللہ ان کی مغفرت کرے۔آخری وقت ان کی یہ خواہش تھی وہ اپنی پوتی (ڈاکٹر روزینہ)کا وزِٹنگ کارڈدیکھنا چاہتے تھے جس میں لکھا ہو ڈاکٹر روزینہ سو اینڈ سو۔
نیپال کی کانفرنس میں میَں نے جو پرچہ پیش کیا تھا وہ ایڈز کے وائرس سے کس طرح کے کینسر کا اور کینسر کے وائرس سے کس طرح ایڈز کا علا ج ممکن ہے اسے کے بھی نمونے پیش کئے تھے ان مریضوں کی صورت میں جن کے کامیاب علاج مجھ سے ہوئے تھے۔
جاری ہے۔۔۔۔

Posted in: Urdu
Return to Previous Page

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Theme Features

Welcome to the Zen Theme which is best used for personal blogging. Here is a list of some of the special features you will be able to take advantage of when customizing your website and blog:
  • Theme Control panel
  • Customize colours, layout, buttons, and more
  • Dynamic widgets with varied widths
  • Up to 8 Widget Positions
  • Built-in Social Networking
  • Google Fonts for Headings and site title
  • and a lot more...

Relax With Herbal Teas

When enjoying your moment of zen, it's best to enjoy fresh herbal teas for relaxation. Of course, choosing the right zen teas requires the expertise of asian herbalists.

Recent Posts

Check out the recent articles posted here at Zen and keep up to date with the latest news and information about having a zen lifestyle.